0

عائشہ منزل شاپنگ مال آتشزدگی کی ابتدائی رپورٹ میں اہم انکشافات

عائشہ منزل شاپنگ مال آتشزدگی کی ابتدائی رپورٹ سامنے آگئی جس میں اہم انکشافات کیے گئے ہیں۔ آگ لگنے کے نتیجے میں بھاری نقصان ہوا ہے۔

تفصیلات کے مطابق محکمہ فائر بریگیڈ نے عائشہ منزل آتشزدگی کی ابتدائی رپورٹ جاری کردی جس میں کہا گیا ہے کہ عرشی شاپنگ مال کی کثیر المنزلہ عمارت میں ایمرجنسی انخلا کا راستہ موجود نہیں تھا، نہ ہی پاور بیک اپ یا ایمرجنسی لائٹنگ کا کوئی انتظام تھا۔
ابتدائی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ شاپنگ مال میں آگ بجھانے کے آلات موجود نہیں تھے۔ خوفناک آتشزدگی کے نتیجے میں 4افراد جان کی بازی ہار گئے۔ گراؤنڈ فلور پر موجود 169 دکانیں مکمل طور پر جل کر راکھ کا ڈھیر بن گئیں۔ میزنائن فلور پر 120دکانیں موجود تھیں۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ میزنائن کی صرف 30 دکانیں درست حالت میں موجود ہیں۔ عرشی شاپنگ مال کی پہلی سے چوتھی منزل تک رہائشی اپارٹمنٹس موجود ہیں۔ کل 76 فلیٹس میں سے 73 آتشزدگی سے محفوظ رہے۔ دوسری منزل پر 2 فلیٹس کو جزوی نقصان پہنچا ہے۔

تیسری منزل پر ایک فلیٹ مکمل طور پر جل کر راکھ کا ڈھیر بن گیا۔ 12 فائر ٹینڈرز، 2 واٹر باؤزرز اور 2 اسنارکلز کی مدد سے ریسکیو آپریشن کے دوران 500افراد بحفاظت نکال لیے گئے، آپریشن کے دوران کسی شخص کی ہلاکت کی اطلاع موصول نہیں ہوئی۔

فائر بریگیڈ کا اپنی رپورٹ میں کہنا ہے کہ بلڈنگ میں موجود شاپنگ مال سے 4افراد کی میتیں برآمد ہوئیں۔ عمارت کے اندر موجود 18 موٹر سائیکلز اور 1 گاڑی بھی جزوی طورپر آگ سے متاثر ہوئی۔ آتشزدگی سے شاپنگ مال کے قرب و جوار کی عمارات محفوظ رہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں