0

غزہ میں اسرائیلی بربریت جاری، خان یونس سے فلسطینیوں کے جبری انخلا کی دھمکی

اسرائیل نے اقوام متحدہ کی سکیورٹی کونسل میں غزہ جنگ بندی کی قرارد ویٹو ہونے کے بعد مقبوضہ فلسطین پر جاری جارحیت میں اضافہ کردیا، خان یونس سے فلسطینیوں کے جبری انخلا کے منصوبے کے تحت علاقہ خالی کرنے کی دھمکی دیدی۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق اسرائیل کے عربی زبان کے ترجمان افیخائی ادرعی نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ایکس پر ایک نقشہ شیئر کیا جس میں خان یونس کے 6 بلاکوں پر نشان لگا کر فلسطینیوں ہنگامی بنیادوں پر ان علاقوں سے نکل جانے کا حکم دیا گیا تھا۔

اسرائیلی قومی سلامتی کے مشیر زاکی ہنیگبی کا کہنا تھا کہ اسرائیلی افواج کی تازہ کارروائیوں میں اہم کامیابیاں ملی ہیں، اسرائیلی افواج نے 7 ہزار سے زائد حماس کے جنگنجوؤں کو نشانہ بنایا ہے۔

اس سے قبل بھی اسرائیل کی جانب سے غزہ کے مشرقی حصے میں فلسطینیوں کی جبری بے دخلی کیلئے اس طرح کے حکمنامے جاری کیے گئے تھے۔

اقوام متحدہ کاکہنا ہے کہ غزہ میں 23 لاکھ سے زائد فلسطینی پہلے ہی بے گھر اور جنگ زدہ شہر میں کئی مرتبہ ایک جگہ سے دوسری جگہ پناہ لینے پر مجبور ہوئے ہیں۔

واضح رہے کہ غزہ میں 7 اکتوبر سے جاری اسرائیلی بمباری سے اب تک 18 ہزار سے زائد فلسطینی شہید ہو چکے ہیں جبکہ ہزاروں لاپتہ افراد کیلئے بھی یہی گمان کیا جا رہا ہے کہ وہ ملبے تلے دب کر شہید ہو چکے ہیں۔

اسرائیل کے وحشیانہ حملوں میں شہید اور زخمی ہونے والوں میں نصف سے زائد تعداد صرف بچوں اور خواتین پر مشتمل ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں