0

پختونخوا؛ پولیس لائن پر خودکش دھماکا، خیبر میں چیک پوسٹ پر حملہ، 3 اہلکار شہید، کئی زخمی

پشاور: خیبر پختونخوا میں سیکورٹی فورسز پر دہشت گردوں کے حملوں میں 3 اہلکار شہید اور کئی زخمی ہو گئے۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق ٹانک میں ایک حملہ آور نے خود کو دھماکے سے اڑا لیا۔ واقعے میں ایک پولیس اہل کار شہید اور 3 زخمی ہو گئے جب کہ 10 اہل کاروں سے رابطہ نہیں ہو پا رہا۔ پولیس کے مطابق فائرنگ کا سلسلہ ختم ہو چکا ہے، جس کے بعد آپریشن جاری ہے جب کہ سیکورٹی فورسز بھی پولیس کے ساتھ موجود ہیں۔

ابتدائی اطلاعات کے مطابق پولیس کی جوابی کارروائی میں ایک حملہ آور ہلاک ہوگیا۔ دہشت گردوں نے پولیس لائن کے اندر گھس کر ہینڈ گرینیڈز اور دیگر ہتھیاروں سے حملہ کیا، جس میں اب تک 2 ایف سی اور 2 پولیس اہل کاروں سمیت 4 اہل کار زخمی ہو گئے جب کہ ایک ریٹائرڈ پولیس اہلکار شہید ہوگیا، جس کی لاش ڈی ایچ کیو اسپتال منتقل کردی گئی ہے۔
ضلع خیبر میں چیک پوسٹ پر حملہ

دوسری جانب ضلع خیبر میں دہشت گردوں نے پولیس اور فرنٹیئر کور کی جوائنٹ چیک پوسٹ پر حملہ کیا، جس میں 2 ا ہل کار شہید اور 6 زخمی ہوگئے ہیں ۔۔

سکیورٹی ذرائع کے مطابق زخمیوں کو طبی امداد کے لیے پشاور منتقل کیا گیا ہے جب کہ جوابی کارروائی میں دہشت گرد فرار ہو گئے۔ ابتدائی اطلاعات کے مطابق دہشت گردوں نے حملے میں دستی بموں سمیت دیگر بھاری ہتھیاروں کا استعمال کیا۔

طبی ذرائع کے مطابق باڑہ دھماکے کے 7 زخمیوں کو حیات آباد میڈیکل کمپلیکس میں لایا گیا ہے، جہاں تمام زخمیوں کی حالت خطرے سے باہر ہے۔ زخمیوں کو نیوروسرجری، آرتھوپیڈک اور سرجیکل وارڈ میں منتقل کردیا گیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں