0

بھارتی پارلیمنٹ کے 79اراکین سلامتی مسائل کی وضاحت طلب کرنے پر معطل

بھارتی پارلیمنٹ کے 79اراکین کو سلامتی مسائل کی وضاحت طلب کرنے پر معطل کردیا گیا۔ اپوزیشن اراکین کا کہنا ہے کہ مودی حکومت عوام کے ساتھ ساتھ اراکینِ پارلیمان کے بھی منہ بند کرانا چاہتی ہے۔

تفصیلات کے مطابق 13دسمبر کو نئی لوک سبھا اسمبلی میں اظہارِ خیال کے دوران وزیٹرز گیلری سے 2 شر پسندوں نے اچانک اراکینِ پارلیمنٹ کی نشستوں کی جانب چھلانگ لگا دی اور اراکین کی نشستوں کی جانب اسموک بم پھینکے۔
مودی حکومت کی زیرِ قیادت بھارتی ایوان میں کھلبلی مچ گئی۔ بھارتی پولیس نے دونوں نوجوان ملزمان کو گرفتار کرکے واقعے کا مقدمہ درج کر لیا۔ بھارتی پارلیمان میں اسموک بم پھینکے جانے کے بعد ایوان کی باقی کارروائی ملتوی کردی گئی۔

متعدد اپوزیشن اراکین کی جانب سے ایوان میں سکیورٹی کے سنگین مسائل پر وزیرِ داخلہ امیت شاہ کو وضاحتی بیان جاری کرنے کا مطالبہ کیا گیا جس پر وضاحتی بیان سامنے آنے کی بجائے اپوزیشن کے اراکین کو معطل کردیا گیا۔

معطل کیے گئے اراکین میں لوک سبھا کے 39 جبکہ راجیا سبھا کے 45اراکین شامل ہیں۔ بھارتی میڈیا کا کہنا ہے کہ اپوزیشن اراکین پارلیمنٹ کے جاری سرمایہ اجلاس کے بقیہ سیشنز میں شرکت یا اظہارِ خیال نہیں کرسکیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں