0

ہریتھک روشن کی پاکستان مخالف فلم ‘فائٹر’ پر خلیجی ممالک میں پابندی عائد

ممبئی: بالی ووڈ اسٹار ہریتھک روشن اور دیپیکا پڈوکون کی پاکستان مخالف فلم ‘فائٹر’ کی ریلیز پر خلیجی ممالک میں پابندی عائد کردی گئی۔

بھارتی میڈیا کے مطابق فلم بزنس کے ماہر اور پروڈیوسر گریش جوہر نے بتایا ہے کہ تمام خلیجی ممالک نے پاکستان کے خلاف بنائی جانے والی بالی ووڈ فلم ‘فائٹر’ کی ریلیز پر پابندی عائد کردی ہے، ابھی تک صرف محتدہ عرب امارات نے فلم کی ریلیز کی اجازت دی ہے۔

پروڈیوسر گریش جوہر نے اپنے بیان میں کہا کہ خلیجی ممالک کی جانب سے فلم ‘فائٹر’ کی ریلیز پر عائد کی گئی پابندی کی وجہ تاحال سامنے نہیں آسکی لیکن اس بُری خبر سے فلم کے ہدایتکار، پروڈیوسرز، اداکار ہریتھک روشن اور دیپیکا پڈوکون کو بڑا دھچکا لگا ہے۔
سدھارتھ آنند کی ہدایتکاری میں بننے والی اس فلم میں ہریتھک روشن اور دیپیکا پڈوکون انڈین فضائیہ کے اسکواڈرن لیڈر کا کردار ادا کررہے ہیں جبکہ انیل کپور کمانڈنگ آفیسر کے روپ میں نظر آئیں گے۔
گزشتہ دنوں فلم ‘فائٹر’ کا ٹریلر ریلیز کیا گیا تھا، تین منٹ سے زائد دورانیہ کے ٹریلر میں دیکھا جاسکتا ہے کہ پلوامہ حملے کے بعد انڈین فضائیہ پاکستان کے خلاف ایک آپریشن کا منصوبہ بناتی ہے اور ساتھ ہی فلم میں حقائق کو توڑ موڑ کر دکھایا گیا ہے۔

پاکستان کے خلاف بنائی گئی اس فلم کا ٹریلر دیکھ کر پاکستانی عوام اور شوبز شخصیات غصے سے آگ بگولا ہوگئے تھے، سوشل میڈیا کے مختلف پلیٹ فارمز پر بھارتی فلم انڈسٹری، ہریتھک روشن اور دیپیکا پڈوکون پر شدید تنقید بھی کی گئی۔
واضح رہے کہ ’فائٹر‘ بنانے کا اعلان جنوری 2021 میں کیا گیا تھا ور اسے ستمبر 2022 کو ریلیز ہونا تھا لیکن کورونا وبا کے باعث اس میں تاخیر ہوگئی اور اب 25 جنوری 2024 میں اسے سینما گھروں کی زینت بنایا جائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں